رنگ نظام

  • بسم اللہ الرحمن الرحیم۔                وَالَّذِیْنَ جَاہَدُوا فِیْنَا لَنَہْدِیَنَّہُمْ سُبُلَنَا وَإِنَّ اللَّہَ لَمَعَ الْمُحْسِنِیْنَ    (العنکبوت 69)۔

محبوبِ الٰہی سلطان المشائخ حضرت خواجہ نظام الدین اولیاء رحمة اللّٰہ علیہ 

٭احسان و تصوف کے بزرگ اور جیّد سلسلۂ عالیہ نظامیہ ؒ کے بانی۔٭سلسلۂ عالیہ چشتیہ کے 20ویں سجادہ نشین۔٭700 فقہیان اسلام میں بالاتفاق ومسلم الثبوت شیخ الاسلام۔ ٭ جملہ معاصر اولیائے کرام میں تسلیم شدہ مجدّدِ وقت اور بزرگ ترین منصب ولایت۔٭ ہم عصر مبلغین اسلام میں کثیرالتبلیغ۔٭اسلامی قوانین کو بین المکاتب بنیادوں پر بیک وقت نافذکرنے والے علمبردار۔٭ہم عصر شیوخ الحدیث میں محدث ِاکبر۔٭ہم عصر مفسرین،محققین اور علمائے تاریخ وسِیر میں ثقہ ترین شخصیت۔٭ادیبات عربی وفارسی کے متبحر عالم،ادیب شہیر اورعارف باللہ شاعرِ محترم۔٭دادا کا اسم گرامی:خواجہ علی بخاری ؒ۔

٭نانا کا اسم گرامی:خواجہ عرب بخاری ؒ۔٭والد گرامی :شیخ الاسلام خواجہ محمد احمدبخاری ؒ۔٭والدہ گرامی:بی بی زلیخا ؒ۔

٭ولادت باسعادت،24صفر 626 ھجری (آخری چہار شنبہ) مطابق 4 اکتوبر 1238ء۔٭شہر ولادت،قُبّة الاسلام بدایوں۔٭شہر ِ رحلت مدینة المشائخ دِلّی ۔٭وصال ،چہار شنبہ صبح 7 بجے بوقت ِ اشراق (بعمر 94 برس)18 ربیع الثانی 725 ھجری مطابق 2 اپریل1325 ء(لحد انداز،حضرت چراغ دہلی ؒ،حضرت رکن الدین ملتانی ؒ)۔

٭ابتدائی تعلیم ،از والدۂ گرامی ،علامہ علاؤ الدین اصولی ؒ،علامہ شمس الدین خوارزمی ؒ

٭فارغ التحصیل بعمر 12 برس دستارِ فضیلت بعمر16 برس بدست ِ مبارک شیخ علی مولا ؒ بزرگ

٭بدایوں میں معاصر اولیائے کرام،شیخ نجیب الدین متوکل ؒ،شیخ علی مکی ؒ ،خواجہ محمد یعقوبؒ ،شیخ جلال الدین تبریزیؒ،شیخ الاسلام نجم الدین صغریٰ ؒ،قاضی کمال الدین جعفری ؒ،شیخ سراج الدین ترمذی ؒ ،خواجہ شاہی موئے تابؒ،خواجہ عزیز کرکیؒ،خواجہ عزیز کوتوالؒ،خواجہ شادی لکھنویؒ،قاضی جمال ملتانی ؒ،حضرت مسعود بخاری ؒ،خواجہ ابوبکر موئیتابؒ،شیخ شاہی روشن ضمیرؒ،شیخ عزیز بشیرؒ،شیخ ناصح الدین ناگوریؒ،قاری شادی مقریؒ،قاری خواجگی مقریؒ،قاضی منہاج سراج ؒ،خواجہ ابو المؤیدؒ،علامہ حسن صفاہانی وغیرھم

٭زیرِ کفالت اہل ِ خانہ،والدۂ گرامی ؒ ہمشیرہؒ مع دوہمشیر زدگانؒ٭بیعت و ارادت ِ بابا فرید شکر گنج ؒ،بروز چہار شنبہ بوقت ظہر ۱۰ رجب ۶۶۷؁ھجری بمطابق مارچ 1269؁ء بمقام اجودھن (پاکپتن شریف بعد از مسافت دہلی 40 روزہ)

٭تکمیل ملفوظاتِ بابا فرید گنج شکر ؒ،۸شوال ۷۰۸ ؁ھجری 21 مارچ1309؁ء۔

٭مرشد گاہ کی طرف عازم سفر 10بار،عطائے خلافت،۱۳ رمضان ھجری رحلت/وصال مرشد،۵ محرم ۶۷۰؁ھجری13 اگست1271؁ء(حضرت ؒاس وقت دہلی میں تشریف فرماتھے۔)آغازِ رُشد وہدایت ،۶۸۶؁ ھجری 1287؁ء پاکیزہ ماحول مع اجتماعی سماجی خدمت و بیعت عامہ و تزکیہ و تجلیہ ولنگر عام

٭اصول وصولی ٔ فتوح لاحد ولارد ولاکد٭ہم عصر سلاطین:سلطانہ رضیہ بنت شمس الدین التمش،سلطان معز الدین بہرام شاہ،سلطان علاؤ الدین مسعود شاہ،سلطان ناصر الدین محمود،سلطان غیاث الدین بلبن،سلطان معز الدین کیقباد،فیرز شاہ خلجی،ابراہیم خلجی،علاؤ الدین خلجی،شہاب الدین عمر شاہ، قطب الدین مبارک،ناصر الدین خسروخان،غیاث الدین تغلق،محمد بن تغلق(بہ تحقیق صحیح کل 14عدد سلاطین)

٭کل 700 صاحب ِ حال و باکرامت خلفاء برائے رُشد وہدایت مقرر فرمائے٭حضرت محبوب الٰہی نظام الدین اولیاءؒ نے تجرد اختیار فرمایا تھا،لہٰذا صُلبی اولاد کوئی نہ تھی اور اپنے مرشد کے نواسوں کی پرورش فرمائی٭روضۂ مبارک دہلی شریف میں مرجع خاص وعام ہے۔(مرکزی سجادہ نشین و امام :خواجہ اسلام الدین نظامی)

٭حالات وملفوظات کی مآخوذ کتب(یہ فہرست ِ کتب مکمل نہیں ہے،مدیر)

فوائد الفواد (مرتبہ امیر علاؤ سنجری)،افضل الفواد(حضرت امیر خسروؒ)،قوام العقائد (مرتبہ محمد جمال قوامؒ)، راحۃالمحبین (حضرت امیر خسروؒ)،سیر الاولیاء (مرتبہ امیر خرد کرمانی ؒ)،انوار المجالس (خواجہ سید محمد امامؒ )،دُرر نظامی (مؤلفہ علی بن محمود جانددارؒ)،تحفۃ الابرار(مرتبہ خواجہ عزیز الدین صوؒفی)،احسن الاقوال (حضرت برہان الدین غریبؒ)،کرامتہ الاخیار(مرتبہ خواجہ عزیز صوفی ؒ)،انفاس الانفاس(حضرت غریبؒ)،مجموع الفوائد(مرتبہ عبدالعزیز مصلی دارؒ)،شمائل الاتقیاء(مرتبہ عماد کاشانی ؒ)،ملفوظات المشائخ (شمس الدین دھاریؒ)،خیر المجالس (حضرت چراغ دہلویؒ)،خلاصۃ الطائف(علی بن محمد جاندارؒ)،جوامع الکلم (سید گیسودرازؒ)، اخبار الاخیار و دیگر کتب تاریخ و سیر،سیر العارفین (مولف جمال دہلویؒ)،حضرت محبوب الٰہی ؒ (اخلاق حسین دہلوی)،اسلام کی زندہ تحریک چشتیت(شاہ عبد الغفور غوریؒ )،اللہ کے سفیر (خان آصف)

 

حضرۃ الحاج خواجہ قاضی شاہ محمد سعیدالدین احمد فاروقی القادری چشتی فخری نظامی ونقشبندی قدس سرّہٗ العزیز 

*ولادتِ باسعادت: آپ ؒ کی ولات باسعادت بتاریخ یکم شعبان المعظم ۱۲۹۲ ؁ھ مطابق ۲ ستمبر۱۸۷۵ ؁ء بروز جمعرات آپ کے آبائی وطن قصبہ گھاٹمپور ضلع کانپور،یوپی میں ہوئی۔ *شجرۂ نَسب حضرت قاضی سعید الدین ؒ بن قاضی امین الدینؒ بن قاضی نادر علیؒ بن قاضی عبدالقادرؒ بن قاضی مصطفی کبیرؒ بن قاضی عبدالواحدؒ بن قاضی شیخ حاتم بزرگؒ بن قاضی شیخ محمد ؒ بن قاضی شیخ چاندؒ بن قاضی شیخ مصطفی عرف موسیٰ حافظ ؒ بن قاضی محمد یعقوب ؒ بن قاضی شیخ محمد ؒ بن قاضی شیخ بندگی معروفؒ بن قاضی شیخ عبد العزیزؒ بن قاضی شیخ تاج الدین ؒ بن سید الدین مولٰنا خواجگیؒ بن قاضی سراج الدینؒ بن امیر ابوالفتح ؒ بن امیر شیخ عمر ؒ بن شیخ ابو بکرؒ بن امیر شیخ عماد الدین ؒ بن شیخ زنجانی ؒ بن شیخ محمد ؒ بن عبدالمجیدؒ بن شیخ عبدالقادرؒ بن شیخ عبد الکریم بن شیخ عبدالجلیل عمر ثانی ؒ بن شیخ عبد العزیز زاہدؒ بن حضرت عبداللہؓ بن امیر المؤمنین سَیّد نا عمر فاروق رضی اللہ عنہٗ

مختصر کوائف نامہ صاحبِ عرس
مرشدنا حضرۃ خواجہ محمد سعیدالدین احمد فاروقی نظامی قدس سرّہٗ العزیز
٭احسان و تصوف کے جیدبزرگ اور سلسلہ ’’ نظامیہ سعیدیہ‘‘کے بانی

٭ولادتِ باسعادت: یکم شعبان المعظم ۱۲۹۲؁ھ مطابق ۲ ستمبر۱۸۷۵؁ء بروزجمعرات بمقام گھاٹمپور ضلع کانپور

٭سلسلۂ نسب: 32پشتوں کے بعد سلسلہ نسب امیر المؤمنین سیدنا حضرت عمر فاروق ؓ سے جا ملتا ہے

٭والدِ گرامی: حضرت امین الدین احمدؒ

٭اولادِ امجاد:حافظ محمد احمد(مرحوم)،قاضی بشیر احمد،رفیق احمد(مرحوم)،قاضی شفیع احمد(مرحوم)، قاضی شفیق احمد اور مرحوم وصی احمد

٭سجادہ نشین: صاحبزادہ قاضی شفیق احمد فاروقی نظامی المدنی،

٭خلفائے طریقت: انیس مجتبیٰ زبیریؒ،حاجی شبراتی میاں

٭دیگر خلفائے باطنی: پروفیسرخواجہ منظور احمد،سید نجیب اللہ قادری۔سید غلام محمد رضویؒ۔صوفی مولوی محمد صدیق۔شیخ محمد الیاس سرشار۔مولوی عبد الخالق ۔مولوی عبدالستارمحمد حبیبؒ۔عبدالمجید۔سید مشتاق احمد۔محمد ابراہیم۔حاجی عبدالوحید۔

 

٭تصانیف ِ: مجمع الشائے فیض۔حیات السعیدؔ۔مناجاتِ سعیدؔ۔گوہر عقیدؔت(سہ حصص)

٭لفظی تصویر: وجیہہ النظر،خوبرو،پرُجمال چہرہ،بھری گول داڑھی،ستواں بینی،لب کم گو مگر آنکھیں گویا،بزرگ چشم حیائے عثمانی لئے ہوئے،ابرو پُر بال،بائیںرخسار پر تل خوشنمائی کے ساتھ،کشادہ جبیں،رنگ گورا ملاحت لئے ہوئے،خوش وضع وپیوستہ دندان،فراخ سینہ،سینہ پُرازبال،نہ دراز قد نہ کوتاہ،تمام اعضاء میں تناسب واعتدال کارفرما،صحت مند مگر نہ دبلے نہ موٹے،رعب وہیتِ بزرگانہ جمال،محبوبیت کا نقیب

٭تاریخِ وصال:آپؒ نے 87 سال کی عمر میں بتاریخ ۱۲ربیع الثانی ۱۳۷۹؁ھ مطابق 16 ا کتوبر 1959؁ء بروز جمعہ بوقت شام اذانِ مغرب کے ساتھ وصال فرمایا۔آپ ؒ کا مزار پُرانوار قبرستان پاپوش نگر کراچی میں ہے اور خانقاہِ عالیہ گلزار سعیدیہ ؒکے نام سے معنُون ومعروف اور مرجع الخلائق ہے۔

 

 

پیر طریقت شفیق الملت حضرت خواجہ شفیق احمد فاروقی نظامی المدنیؒ

مزید معلومات

٭اسمِ گرامی:خواجہ سید اسلام الدین نظامی بخاری ؒ

٭ 18ویں جانشینِ خواجہ نظام الدین اولیاءؒ حضرت خواجہ سید اسلام الدین نظامی بخاری ؒ

٭خطاب و القاب:سراج الاولیاء، شمس المشائخ، شمس الملّت، خواجہ بزرگ

٭نسب نامہ : 37 واسطوں سے حضرت امام حسین ؑ سے ملتا ہے۔ ٭دادا کا اسم گرامی: حافظ خواجہ سید علیم الدین نظامی ؒ ٭والدِ گرامی:خواجہ سمیع الدین نظامیؒ

٭والدۂ گرامی:سیدہ حسن افروزؒ ٭ولادت باسعادت:10اگست1919 ؁ء ٭شہر ولادت: مدینۃالمشائخ دلّی (دہلی)

٭شہر وصال: مدینۃالمشائخ دلّی (دہلی) ٭وصال: بروز جمعہ،29 ذی الحج1427؁ ھجری بمطابق19 جنوری2007 ء

٭وقت ِوصال:غروبِ آفتاب ٭بیعت و خلافت: والد گرامی حضرت خواجہ سمیع الدین نظامیؒ سے بیعت و خلافت حاصل کی

٭خدمت منبر و محراب: مسجد ِخلجی درگاہ حضرت نظام الدین اولیاءؒ میں آپ ؒ نے تقریباً60 برس امامت و خطابت کے فرائض سر انجام دیے۔

٭ملّی خدمات: تقسیم ہندوستان کے وقت اسلامی (نظامی) اسکاؤٹنگ کا شعبہ قائم فرما کر مہاجرین کی خدمت میں ہمہ تن مصروف رہے ،مدرسہ جامعۃالقران نظامیہ قائم فرمایا

٭ اَشاعتی خدمات:آپ ؒ فرماتے تھے کہ ہمارے اسلاف نے اس قدر علمی کام سر انجام دیا ہے کہ اس کی ترویج و اشاعت کے لیے الگ الگ دفتر چاہیے ہیں۔لہٰذا آپؒ تا دَمِ وصال اپنے اس فرمان پر عمل پیرا رہے۔آپ ؒ نے جن کُتُب کو شائع کیا ان میں سے چند یہ ہیں:معمولات چشت،سیر الاولیاء،دیوان خسرو(فارسی)

٭ہم عصر اولیاء کرام:مولانا احمد حسن نظامی(سابق صدر آل انڈیا انجمن صوفیائے دہلی)،سید شاہ انصار حسین الہ آبادی ؒ (سجادہ نشین درگاہ سید صاحب الٰہ آباد)،پیر نصیر الدین نصیر ؒ (سجادہ نشین دربار گولڑہ شریف )، خواجہ شفیق احمد فاروقی مد ظلہٗ العالی ساکن مدینہ(سجادہ نشین خانقاہ نظامیہ گلزار سعیدیہ)،پیر سید افضل حسین شاہ مد ظلہٗ العالی (سجادہ نشین دربار علی پور سیداں)٭خلفاء و جانشین:آپ نے 17 صفر 1417 ؁ ھ کو ایک تقریب ِنیابت و جانشینی میں حضرت حافظ خواجہ محمد امین نظامی مد ظلہٗ العالی کو دستارِ خلافت و جانشینی عطا فرمائی

٭زوجۂ محترمہ:سیدہ محبوب بانوؒ ٭صاحب زادے:1 }سید محبوب الاسلام نظامی (نجمی میاں ) 2 }سید منہاج الاسلام نظامی، ٭روضۂ مبارک: مدرسہ جامعۃ القران نظامیہ،درگاہ خاص حضرت خواجہ سید نظام الدین اولیاءؒ ، دہلی میں مرجع خاص و عام ہے۔ بیعتِ شمس المشائخ خواجۂ اسلام میں ہر جگہ پیر طریقت راہ نما کا ساتھ ہو

حضرت شمس الحق نظامیؒ

امین ملت امین المشائخ امین امین القرآن

logo
logo
logo
logo
logo
logo